دن بھر مزدوری کا انتظار،،شام کو خالی ہاتھ گھر واپسی

حکومت پنجاب کی جانب سے سموگ کے پیش نظر بھٹہ بند ہونے سے اینٹوں کی پیداوار رکتے ہی اینٹوں کی فی ہزار قیمت7ہزار روپے سے 10ہزار روپے تک جاپہنچی۔۔لاگت بڑھنے کی وجہ سے تعمیراتی منصوبے سست روی کا شکار ہوچکے ہیں جس سے روزانہ اجلت پر کام کرنے والے مزدور بے روزگار ہورہے ہیں۔۔انکا کہنا ہے کہ وہ روز صبح اس امید کیساتھ گھر سے نکلتے ہیں کے بچوں کیلئے کچھ کما کر لائیں لیکن روز خالی ہاتھ گھر جانے پر مجبور ہیں۔۔تعمیراتی سامان فروخت کرنے والے دکاندار بھی اس صورتحال میں شدید پریشانی کا شکار ہیں۔۔
بھٹے کی بندش اور مکانات کی تعمیر میں سست روی سے اس کاروبار سے وابستہ مزدور اور دکاندار حکومت سے تعمیراتی سند کی بحالی کیلئے اقدامات کے خواہاں ہیں۔۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.