حکومت اپنےاعلان پرعملدرآمد کرانے میں ناکام

حکومتی اعلان کے باوجود جان بچانے والی ادویات کی قیمتوں میں اضافہ واپس نہ لیا جاسکا، میڈیکل سٹوروں اور فارمیسیز میں 30 سے 60 فیصد ادویات مہنگے داموں فروخت ہور ہی ہیں اورمریض نہ چاہتے ہوئے بھی مہنگی دوائیں خریدنے پرمجبورہیںمیڈیسن کمپنیوں کی جانب سے قیمتوں میں اضافہ سے 400 سے زائد اقسام کی ادویات مہنگی ہوچکی ہیں ،انسولین، دل، گردے، جگر، معدے، کھانسی، زکام، بخار اور دیگر اینٹی بائیوٹک ادویات کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافہ سے مریض اور ان کے لواحقین شدید پریشان ہیں،اپنےفیصلے پرعملدرآمد کرانےکےحوالے سے حکومتی رٹ کہیں نظر نہیں آرہی۔شہریوں کا کہنا ہے کہ میڈیکل سٹور مالکان بعض ادویات کا مصنوعی بحران پیدا کرکے خود ساختہ طور پر ریٹ دگنا کر دیتے ہیں جبکہ ادویہ ساز کمپنیاں بھی اپنی من مانی کررہی ہیں،شہریوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنےاعلان پرسختی سےعملدرآمد کروائے اورخلاف ورزی کرنے والوں کو سزادے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.