جنگلی حیات کے تحفظ کاعالمی دن!!!

0

ہر سال دنیا بھر میں جنگل میں رہنے والے لاتعداد خطرناک جانور انسانی درنگی کے پھیٹ چڑھ جاتے ہیں۔کبھی کوئی شکاری ہاتھی کی جان لیے لیتا ہے، تو کبھی کوئی اپنا دسترخوان سجانے کیلئے کرتا ہے ہرن کا شکار، ظلم کی داستان یہاں ختم نہیں ہوتی جنگلی حیات انسانوں کی خوارک بننے کے ساتھ ساتھ جنگل میں بسنے والے طاقتور جانوروں کی بھوک مٹانے کا سامان بھی بن جاتی ہے۔
جنگلی حیات کے تحفظ کاعالمی دن منانے کا مقصد معدومی کے خطرے کا شکار جاندار اور نبادات کوتحفظ فراہم کرنا ہے۔اس دن کو عالمی سطح پرمنانے کی قرارداد 2013 میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے منظور کی تھی۔ اس سال کا موضوع کرہ ارض پر تمام جانوروں کی دست گیری ہے۔ اس حوالے سے اقوام متحدہ اور دیگر تنظیموں کے تحت پاکستان سمیت دیگر مما لک میں جنگلی حیات کے تحفظ اور حقوق کے حوالے سے مختلف تقریبات کا انعقاد کیا جائے گا۔
بلوچستان کا وسیع وعریض لینڈ سکیپ چٹیل اور ریتلے میدان، وسیع وعریض پہاڑی سلسلوں، جنگلات اور قابلِ دید طویل ساحل اور قدرتی آب گاہوں سے مزین ہے لیکن اس کی خاص بات اور انفرادیت یہ ہے کہ یہ سب نادر و نایاب جنگلی حیات کا مسکن ہے۔ مختلف وجوہات کی بناء پر صوبے میں جنگلی حیات کے وجود اور بقا کو خطرات لاحق ہیں اور ان میں سے کچھ کا معدوم ہونےکا بھی خدشہ ہے۔جنگلی حیات کے غیرقانونی شکار پر پابندی عائد کی گئی ہے تاہم اب بھی مختلف علاقوں میں غیرقانونی شکار کیا جاتا ہے، جو جانوروں کی بقاء کے لیے خطرے کی گھنٹی ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: