جنوبی افریقہ کیخلاف پاکستان کا تیسرا ٹیسٹ میچ

جنوبی افریقہ کےخلاف پہلے ٹیسٹ میچ کےبعد دوسرے میچ میں بھی پاکستانی بیٹنگ لائن ناکامی سے دوچار ہوئی مگر اس مرتبہ باؤلنگ لائن نے بھی ساتھ نہ دیا اور یوں میزبان ٹیم نے 9وکٹ کی آسان فتح اپنے نام کی اور پاکستان کو سیریز سے بھی ہاتھ دھونا پڑا۔
دوسرے ٹیسٹ میچ میں شکست کے بعد قومی ٹیم کے کوچ نے انکشاف کیا کہ اگر لیگ سپنر شاداب خان انجری کا شکار نہ ہوتے تو پاکستانی ٹیم پانچ باؤلرز کے ساتھ میدان میں اترتی،،،انہوں نے کہا کہ میں پانچ باؤلرز کو فائنل الیون کا حصہ بنانے کی حکمت عملی کا بڑا مداح ہوں کیونکہ اس کی بدولت دیگر باؤلرز کو آرام کا موقع ملتا ہے اور میچ بھی ہمارے کنٹرول میں رہتا ہے لیکن ایسا کرنے کیلئے ہمیں مکمل طور پر فٹ شاداب کی ضرورت تھی جبکہ لیگ سپنر کی غیر موجودگی میں فہیم اشرف کو کھلائے جانے کی صورت میں ٹیل اینڈرز کی فہرست کافی لمبی ہو جاتی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.