جعلی اکاﺅنٹس اور منی لانڈرنگ کیس

نیب نے جعلی اکاﺅنٹس اور منی لانڈرنگ کیس میں گرفتار ملزمہ فریال تالپور کو جسمانی ریمانڈ ختم ہونے پر احتساب عدالت میں جج محمد ارشد ملک کے سامنے پیش کیا ،نیب نے ملزمہ کے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی، وکیل صفائی لطیف کھوسہ نے کہا کہ فریال تالپور پارک لین کمپنی کی ڈائریکٹر نہیں ،پارک لین میں فریال تالپور کا کوئی کردار نہیں ۔عدالت نے فریال تالپور کو روسٹرم پر بلایا،جج ارشد ملک نے استفسار کیا کہ کیا آپ کو ہسپتال لے کر گئے،فریال تالپور نے کہاکہ میڈیکل ٹیم آئی تھی بلڈپریشر کا مسئلہ تھا،میں شوگر کی مریضہ بھی ہوں، جج نے استفسار کیا کہ کیا آپ کو ہائپرٹینشن بھی ہے ،اس پر سابق صدرآصف زرداری کی ہمشیرہ نے کہا کہ جی ہاں ،جج ارشد ملک نے کہا کہ جن کیخلاف مقدمات ہوں وہ ہائپرٹینشن کا شکار کیوں ہو جاتا ہے، عدالت نے فریال تالپورکا مزید 14 روزہ ریمانڈ منظور کرلیا اور ملزمہ کو 8 جولائی کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیدیا۔واضح رہے فریال تالپور اور ان کے بھائی آصف زرداری کی جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں ضمانت عدالت نے منسوخ کر دی تھی جس کے فوری بعد نیب حکام نے زرداری کو اسلام آباد سے گرفتار کرلیا تھا جبکہ فریال تالپورکچھ روز بعد 14 جون کو گرفتار کرکے ان کی رہائش گاہ کو سب جیل قرار دیدیا گیا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.