ترک صدرکا پارلیمنٹ کےمشترکہ اجلاس سےجذباتی خطاب

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے ترک صدر رجب طیب اردگان نے خطاب کرتے ہوئے کہا خود کو اپنے گھر میں محسوس کرتاہوں،،، ہماری دوستی مفاد سے نہیں بلکہ عشق اور محبت سے پروان چڑھی ہے۔ ہمارے دکھ اور خوشیاں مشترکہ ہیں۔
ترک صدر کا کہنا تھا کہ ترکی کی تحریک آزادی میں برصغیر کے مسلمانوں کا جذبہ نا قابل فراموش ہے،،پاکستانی عوام نے پیٹ کاٹ کر ترکی کی مدد کی،ہم اسے کبھی نہیں بھول سکتے،سڑکوں پر گڑ گڑا کر دعائیں کرنے والوں کوہم کیسے بھو ل سکتے ہیں،انہوں نے پاکستانی عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ہم آپ سے محبت نہیں کریں گے تو کس سے کریں گے ۔
طیب اردگان نے مقبوضہ وادی پر اپنے موقف میں کہا کہ کشمیر ہمارے لیے وہی حیثیت رکھتا ہے جو آپ کیلئے ہے،مذاکرات کے ذریعے کشمیرکے حل پر اپنے موقف پرقائم رہیں گے،،، پاکستان کا دکھ در د ہمارا دکھ در د ہے ، اس کی کامیابی ہماری کامیابی ہے ۔ ان کاکہنا تھا کہ اقتصادی ترقی چند دنوں میں نہیں،مسلسل محنت اور جدوجہد سے ممکن ہوتی ہے، پاکستانی حکومت کے اقدامات سے تجارت کیلئے ساز گار ماحول بن رہا ہے۔
ترک صدر نے کہاکہ فلسطین پرامریکی پلان امن نہیں بلکہ قبضے کامنصوبہ ہے ،انہوں نے کہا کہ عالمی برادری نے شام کے عوام کو تنہا چھوڑ رکھا ہے، ترکی شام کے عوام پر 40 ارب ڈالر خرچ کر رہا ہے، مظلوم مسلمانوں کو جابرانہ حملوں سے بچانا ہمارا مقصد ہے، مظلوم مسلمانوں کا ساتھ دینا ہمارا مذہبی اور اخلاقی فرض ہے ۔
ترک صدر رجب طیب اردوان کی ایوان آمد پر ارکان نے کھڑے ہو کر استقبال کیا۔
مشترکہ اجلاس میں چاروں وزرائے اعلیٰ، گورنرز، آزاد کشمیر کے صدر، وزیراعظم اور سپیکر، غیر ملکی سفیر، مسلح افواج کے سربراہان شریک ہوئے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: