تبدیلی سرکار کی "غریب مکاؤ مہم” میں مزید تیزی لانے کا فیصلہ

0

سال2020 کے پہلے تین ماہ عوام پر بھاری، بجلی و گیس کے بم پھوٹنے کو تیار، مشکوک مالی لین دین پر بھی پکڑ ہو گی۔ آئی ایم ایف کی چار شرطوں پر عملدرآمد شروع ہو گیا۔
پہلی شرط کےمطابق30جنوری تک نجی پاورکمپنیوں کو مکمل پیداواری صلاحیت پر چلانے کے لیے 155ارب روپے کے سالانہ کیپسٹی چارجز کا 25 فیصد بجلی بلوں سےوصول کیاجائےگاجوکہ 40 ارب روپے کے لگ بھگ بنتا ہے، اسی طرح گیس نرخوں میں بھی 214 فیصد اضافہ کیا جائے گا۔
دوسری شرط کےتحت حکومت 28 فروری تک اپنی آمدن،اخراجات اور بچت سےپارلیمان کوآگاہ کرےگی جبکہ تیسری شرط۔ کے مطابق حکومت 31 مارچ تک اسٹیٹ بینک کی خودمختاری کا بل پارلیمان میں لائے گی جس کے تحت خسارہ پورا کرنےکیلئےنئے نوٹ چھاپنے پر پابندی لگ جائے گی۔
چوتھی شرط کے مطابق حکومت ایف اے ٹی ایف کی دو اہم شقوں نو اور دس پر عملدرآمدکرے گی جن کے تحت بینک اپنے صارفین کے لین دین کی کڑی نگرانی کریں گے اورعملدرآمد کرنے والے اداروں پر بینک سیکریسی قوانین لاگو نہیں ہوں گے۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: