بیکٹیریا طاقتور ہوگئے،کروڑوں انسانوں کی جان کوخطرہ

اب انسانوں کا علاج حشرات الارض سے ہوگا،،،،جی ہاں!!!طبی ماہرین نے حیران کن انکشاف کیا ہے کہ انسان پر حملہ آور بعض بیکٹیریا بہت طاقتور ہوچکے ہیں جس کے باعث موجودہ اینٹی بایوٹکس ادویات کی کارکردگی میں کمی آئی ہے اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے حشرات الارض پر ریسرچ کی گئی جس سے معلوم ہوا کہ حشرات الارض کے جسم میں موجود بیکٹیریاز سے اینٹی بایوٹیکس ادویات بنائی جاسکتی ہیں۔یونیورسٹی آف وسکانسن میڈی سن کے ماہرین ایک ایسی چیونٹی ’سائفو مائرمیکس‘سامنے لائےہیں جس کے بدن سے ایک مرکب ’سائفومائسن‘ دریافت ہوا ہے جو انسان کی قوت مدافعت میں افاضے کے ساتھ ساتھ فنجائی نامی ایسے بیکٹیریا کو شکست دے سکتا ہے جو اب تک کئی اینٹی بایوٹکس کو ناکارہ بناچکا ہے ماہرین نے اڑھائی ہزار کے قریب چیونٹیوں، مکھیوں، بھنوروں اور تتلیوں وغیرہ کا مطالعہ کیا تو معلوم ہوا کہ ان جانوروں میں 500 سے زائد اقسام کے بیکٹیریا کی بڑی مقدار ہے اور ماہرین نے انہیں بہت طاقتور پایا ہے اب سائنسداں ان کے 50 ہزار کے قریب ٹیسٹ کریں گے۔ تاہم ابتدائی تجربات بہت حوصلہ افزا ثابت ہوئے ہیں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.