بھارت میں نسل پرستی انتہاکو پہنچ گئی ۔۔۔ اقلیتیں غیرمحفوظ

0

نام نہاد سیکولر بھارت میں مسلمانوں سمیت تمام اقلیتیں غیر محفوظ ہیں۔شر پسند مودی سرکار کی سر پرستی میں بھارت میں مسلمانوں کے قتل عام کا سلسلہ جاری ہے تودوسری جانب شر پسند مودی سرکار نےمسلمانوں کے بعداب مسیحیوں کو بھی مذہب کی بنیاد پر تنگ کرنا شروع کر دیا۔بھارت کے شہر بنگلور میں انتہا پسند ہندوؤں کے اعتراض اور دباؤ پر مسیح برادری کے قبرستان کے داخلی راستے پر نصب 12 فٹ لمبے مجسمے کو ہٹا دیا گیااورمیسح برداری کو قبرستان کے قریب آنے پر سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دی گئیں ہیں۔
بنگلور کے آرچ بشپ پیٹر مچاڈو نے مقامی پولیس کی جانب سے دیہی ضلع میں مسیحی قبرستان میں نصب مجسمے کو ہٹانے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پولیس کا محض چند انتہا پسند ہندوؤں کے دباؤ میں آکر مجسمہ ہٹانا قابل مذمت ہے۔یہ بھارتی آئین میں تفویض مذہبی آزادی کے منافی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ پولیس کا عمل مقامی سطح پر مذہبی آہنگی کومتاثر کرے گا۔
صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور وزیر اعظم عمران خان نے سوشل میڈیا ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مودی کے آر ایس ایس فاشسٹ نظریے سے بھارت میں کوئی اقلیت محفوظ نہیں، وقت آگیا ہے کہ دنیا بھارتی حکومت کے ناپاک اداروں کو پہچانے عالمی برادری بھارت میں اقلیتوں کی نسل کشی کو روکے ۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بھارت میں بڑھتی نسل پرستی نہ رکی تو مسلمانوں اور دلتوں سمیت تمام گروہ اس کی زد میں آئیں گے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: