بھارتی غلامی سے نجات کیلئےخالصتان تحریک میں تیزی

ظلم پھر ظلم ہے بڑھتا ہے تو مٹ جاتا ہے،،،، بھارت میں اقلیتوں کے خلاف پائی جانے والی انتہا پسندی برسوں سے حکومت کی سرپرستی میں پروان چڑھ رہی ہے جس کے باعث بدامنی اور بے چینی بڑھتی جارہی ہے اور بھارت کی مختلف ریاستوں میں علیحدگی کی تحریکیں زور پکڑتی جارہی ہیں بھارتی پنجاب کو الگ صوبہ بنانے اور مودی سرکار کے ظلم و ستم سے آزادی حاصل کرنے کے خالصتان کے حامی سکھوں کی خالصتان تحریک میں تیزی آتی جارہی ہے اورناصرف بھارت بلکہ امریکااورانگلینڈ سمیت یورپ کے مختلف ممالک میں ہونے والےمظاہروں نے مودی سرکار کا مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب کردیا بھارت کے یوم جمہوریہ کے موقع پر سکھ فار جسٹس کے زیر اہتمام میساچوسٹس میں بھارتی سفارتخانہ کے سامنے بہت بڑا احتجاجی مظاہرہ ہوا جس میں ظلم کے ستائے سکھوں نے بھارتی “ترنگا” نذر آتش کرکے اپنی نفرت کا اظہار کیا ۔ سکھ رہنماؤں کاکہنا تھاکہ جھنڈے کو نذر آتش کر کے ہم دنیا کو بتانا چاہتے ہیں کہ ہندو انتہا پسندوں نے بھارت کا حلیہ بگاڑ دیا ہے، سکھ خالصتان بنا کر دم لیں گے ۔ خالصتان انٹرنیشنل افئیرز سنٹر امریکہ کے سربراہ کاکہنا ہے کہ آپ دیکھیں گے کہ وہ وقت دور نہیں جب بھارت کے ٹکڑے ہونگے اور دنیا کے نقشے پر دو آزاد ریاستیں خالصتان اور کشمیر اُبھریں گی ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.