بلوچستان،خیبرپختونخوا میں بارشوں اورژالہ باری سے تباہی

ایران سے آنے والے ہواؤں کے سسٹم کے باعث بلوچستان کے طول وعرض میں جمعے سے جاری بارشوں کا سلسلہ تھم گیا ہے۔ شدید بارشوں کے باعث مختلف علاقوں میں سیلابی کیفیت ہے جب کہ کئی علاقوں میں جانی و مالی نقصانات ہوئے ہیں اور مختلف اضلاع میں 2 بچوں سمیت 22 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے۔ضلع ڈھاڈرمیں بارش سے کچے مکان کی چھت گرنے سے دوبچے ملبے تلے دب کرجاں بحق ہوگئے ۔ دکی اورسبی میں دیوارگرنے سے دوافراد جاں بحق ہوئے جب کہ بارکھان میں ندی سےایک شخص کی لاش ملی ۔ادھرتیز بارش کے بعد کوئٹہ شہر میں سیوریج کا نظام بھی درہم برہم ہوگیا جس کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات اور دشواری کا سامنا کرنا پڑا، سڑکوں پر بارش اور سیوریج کا پانی جمع ہونے سے ٹریفک کی روانی بھی متاثرہوئی۔ادھرخیبرپختونخوا کے علاقے شانگلہ میں چغرزئی کے مقام پربارش سے سڑک پر پھسلن کے باعث گاڑی کھائی میں جاگری، جس سے 4 افراد جاں بحق اور7 زخمی ہوگئے۔ ضلع باجوڑ کی تحصیل خار میں بھی مکان کی چھت گر گئی جس سے ایک بچہ جاں بحق اور ایک زخمی ہوگیا۔ صوبائی حکومت نے بارشوں کے باعث ممکنہ لینڈ سلائیڈنگ اورسیلابی ریلوں کے پیش نظرالرٹ رہنے کی ہدایات جاری کردیں۔دوسری جانب محکمہ موسمیات نے آئندہ 24 گھنٹے کے دوران پنجاب، خیبرپختونخوا، کشمیر، گلگت بلتستان، بلوچستان کے مختلف علاقوں میں بارش کا امکان ہے جبکہ سندھ میں سکھر اور لاڑکانہ ڈویژن میں تیز ہواؤں کے ساتھ بارش کی پیش گوئی کی گئی ہے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.