باپ نےبیٹےکی خواہش پر لگژری کار لیمبورگینی بنا ڈالی

ایک روز سٹیرلنگ سے ان کے بیٹے زیندر نے کہا کہ کیا ایسا ممکن ہے کہ ہم تھری ڈی پرنٹر ٹیکنالوجی کی مدد سے لیمبورگینی بنائیں۔ اسٹیرلنگ نے بیٹے کی خواہش پر اپنی مہارت سے اس منصوبے کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لیے کام کا آغاز کیا۔
سٹیرلنگ بیکس اور ان کے 11 سالہ بیٹے زیندر ایک سال سے اطالوی سپر کار کے ماڈل پر کام کررہے ہیں جو اب تکمیل کے آخری مراحل میں ہے۔اس گاڑی کو مکمل طور پر لیمبورگینی نہیں کہا جاسکتا لیکن اس میں لیمبورگینی کے کچھ مستند حصے استعمال کیے گئے ہیں جو اس گاڑی میں زیادہ تر استعمال ہوتے ہیں۔
باپ بیٹےاپنی تیارکردہ گاڑی میں ٹیسٹ ڈرائیور پر بھی گئے، اسٹیرلنگ کامنصوبہ ہےکہ وہ اپنے بیٹےکو لیمبورگینی پرسکول چھوڑنے جائیں تاکہ ان کا بیٹا بچوں کو اس بارے میں بتاسکے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.