ایک اور دن گزر گیا، نہتے کشمیریوں نے سکھ کا سانس نہ لیا

0

جنت نظیر وادی کو جہنم بنے 168 روز ہو گئے،،،،کرفیو اور بد ترین لاک ڈاؤن نے گھروں میں محصور کشمیریوں کی زندگی اجیرن بنا دی۔
مقبوضہ وادی میں بھارتی سپریم کورٹ کے احکام کے باوجود انٹرنیٹ اور موبائل سروس معطل ہے، ٹرانسپورٹ بدستور بند،وادی کے تعلیمی ادارے، کاروباری مراکز اور دکانیں بھی بند ہیں۔
دوسری جانب مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی عروج پر ہے بھارتی فوج کی جانب سے کھلم کھلا کشمیری نوجوانوں کے قتل اور خواتین کی عصمت دری جیسے انسانیت سوز اور غیر اخلاقی مظالم ڈھائے جا رہے ہیں۔
80 لاکھ کشمیری بھارتی جبر سے نجات کیلئے دنیا کی طرف دیکھ رہے ہیں۔بہادر کشمیریوں کی بڑی تعداد تمام تر پابندیوں کے باوجود آئے روز اپنے حقوق کے لیے قابض فوج کے خلاف مظاہرے کر رہی ہے۔ تاہم عالمی انسانی حقوق کی تنظیموں کی مجرمانہ خاموشی تا حال برقرار ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: