ایک اور حوا کی بیٹی خود عورت کے ظلم کا شکار

ایک اور حوا کی بیٹی خود عورت کے ظلم کا شکار ہو گئی۔ لاہور کے علاقہ ڈیفنس میں چودہ سالہ بچی پر مالکن نے بے پناہ تشدد کر کے اس کے بال بھی کاٹ دیے۔ تشدد کی شکار لڑکی کے والدین نے بتایا کہ انھوں نے اپنی بیٹی کو عائشہ بی بی کے پاس 8 ماہ قبل ملازمہ رکھوایا تھا، اس دوران بچی سے نہ تو ملنے دیا گیا اور نہ ہی کوئی معاوضہ دیا گیا۔
لڑکی کی والدہ کا کہنا تھا کہ وہ بچی پر تشدد کرتے رہے اور پھر اس کے سر کے بال مونڈ دیے، کمر پر کٹ لگا کر گھر سے کچھ فاصلے پر ویرانے میں پھینک کر چلے گئے، اس کے بعد مالکن نے فون پر اطلاع دی کہ اپنی بیٹی کو مانگا منڈی باغ سے آ کر لے جاؤ۔ بچی نے روتے ہوئے بتایا کہ مالکن اسے گھر نہیں جانے دیتی تھیں، ماں سے ملنے کے تقاضے پر مالکن نے تشدد کیا اور بال کاٹے۔
پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکی کی والدہ نے تھانہ مانگا منڈی میں درخواست جمع کرائی تھی، جو متعلقہ تھانے جنوبی چھاؤنی بھجوا دی گئی ہے، مالکن عائشہ بی بی کے خلاف جلد کارروائی شروع کی جائے گی۔ تشدد کی شکار لڑکی کی والدہ نے وزیراعظم عمران خان اور چیف جسٹس گلزار احمد سے بھی انصاف کا مطالبہ کیا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: