ایرن نےجوہری ہتھیاربنانےکی کوشش کےالزام کومستردکردیا

دارالحکومت تہران میں ایران کے ممتاز دانشوروں اور سائنس دانوں کے ساتھ ملاقات میں ایرانی سپریم لیڈر نے کہا کہ ایران نے کبھی بھی کوئی جوہری ہتھیار بنانے یا بنانے کے بعد اس کے ممکنہ استعمال کی خواہش نہیں کی،کیونکہ ایٹمی ہتھیار تیار کرنا اور اسے ذخیرہ کرنا مذہبی طور پر منع ہے۔سپریم لیڈرآیت اللہ علی خامنہ ای کا کہنا تھا کہ ایران جوہری ٹیکنالوجی کی موجودگی کے باوجود جوہری ہتھیاروں کی تیاری سے ہمیشہ دور رہا۔ایرانی حکومت ایٹم بم بنانے کی کوشش کے الزامات کو ہمیشہ مسترد کرتی آئی ہےیاد رہے کہ ایران کو جوہری ہتھیاروں کی تیاری سے روکنے کے لیے عالمی قوتوں نے ایران سے 2005ء میں جوہری معاہدہ طے کیا تھا، گو ایران ہمیشہ جوہری ہتھیاروں کی تیاری کے الزامات کو مسترد کرتا آیا ہے تاہم امریکا نے ایران پر جوہری ہتھیاروں کی تیاری کا الزام عائد کرتے ہوئے 2018ء میں معاہدے سےدست برداری کا اعلان کیا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.