اقوام متحدہ کا کشمیرمیں مواصلات کی بندش ختم کرنےکامطالبہ

اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق کے دفتر کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ حکومت کا انٹرنیٹ اور مواصلات کے نظام کو بغیر کسی وجہ کے بند کرنا بنیادی جمہوری اُصولوں کی خلاف ورزی ہے۔ مواصلات کی بندش کشمیریوں کو بغیر کسی جرم کے اجتماعی سزا دینے کے مترادف ہے۔ماہرین نے مظاہرین کے خلاف بھارتی فورسز کی جانب سے حد سے زیادہ طاقت استعمال کرنے پر خدشات کا اظہار کیا اور کہا کہ بھارت کی ذمہ داری ہے کہ ہتھیاروں کا استعمال صرف اس وقت کیا جائے جب جانی نقصان کا خدشہ ہو۔ماہرین نے سکیورٹی اہلکاروں کے رات میں گھروں پر چھاپے مار کر نوجوانوں کو گرفتار کرنے پر تشویش کا اظہار کیا، کہا کہ یہ گرفتاریاں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے زمرے میں آتی ہیں۔ حکام ان کی تفتیش کریں اور ذمہ داران کے خلاف کارروائی کی جائے۔قوام متحدہ کے انسانی حقوق کے ماہرین نے جبری گمشدگیوں کے سے متعلق خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ فکرمند ہیں کہ گرفتار کیے گئے لوگوں کو کہاں رکھا گیا ہے۔۫انہوں نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت کے خاتمے کے بعد خطے میں کشیدگی بڑھنے کا بھی خدشہ ظاہر کیا ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.