افغانستان میں امن کی امریکی کوشش کو بڑا دھچکا

افغان طالبان اور افغان حکام پہلی بار ایک میز پر بیٹھنے جارہے تھے مگر افغانستان حکومت کی جانب سے طالبان سے مذاکرات کرنے والے وفد کی فہرست میں 250 افراد شامل کیے تھے۔ طالبان نے قطر میں مذاکرات کے لیے افغان حکومت کی طرف سے ملنے والی طویل فہرست کو تنقید کا نشانہ بنایاتھا ۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ کانفرنس ہے کوئی ولیمے کی دعوت نہیں جو وفد میں اڑھائی سو لوگوں کو شامل کرلیا گیا ہے۔ طالبان نے افغان حکومت کومذاکرات کیلئے غیر سنجیدہ قرار دیتے ہوئے ساتھ بیٹھنے سے انکار کردیا۔امریکا،افغان حکومت اور افغان طالبان کے درمیان مذاکرات انیس سے اکیس اپریل تک قطر میں کیے جانے تھے جن میں افغانستان میں قیام امن سے متعلق امور پر بات کی جانی تھی اور عالمی سطح پر اسے ایک مثبت قدم قرار دیا جارہا تھا

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.