اداکاری ہو یا گلوکاری ، ہر انداز شاندار

بلھے شاہ کی نگری قصور میں آنکھ کھولنے والی اللّٰه‎ وسائی نے بڑے ہوکر نورجہاں کے نام سے شہرت پائی۔ نورجہاں نے سدا بہار آواز کے ساتھ بچپن میں ہی گلوکاری اور اداکاری کی دنیا میں قدم رکھ دیا تھا۔
ملکہ ترنم نے 74 سالہ کیریئر میں مختلف زبانوں میں تقریبا 20ً ہزار سے زائد گیتوں کو اپنی آواز سے یادگار بنایا۔
نورجہاں نے تقریبا ً 40 فلموں میں اداکاری کے جوہر بھی دکھائے اور لاتعداد قومی و عالمی ایوارڈز بھی اپنے نام کیے۔
ملکہ ترنم نے اردو، پنجابی، فارسی، بنگالی، پشتو، سندھی اور ہندی میں تقریباً ہزاروں گانے گائے اور ہر طرف دھوم مچادی۔
اداکاری ہو یا گلوکاری نورجہاں کا انداز شاندار، منفرد اور ہر دیکھنے والے کی پسند کا حصہ رہا، جنگ کے دنوں میں انہوں نے اپنے نغموں سے عوام اور فوجی جوانوں کا خون گرمائے رکھا۔
نورجہاں 2000ء میں ہمیشہ کیلئے ہم سے بچھڑ گئیں لیکن ان کی آواز چاہنے والوں کے کانوں میں رس گھولتی رہے گی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.