احتجاج اور احتیاط دونوں ساتھ ساتھ

0

پولینڈ میں رہ کر جرمنی میں کام کرنے والے سیکڑوں افراد نے پولینڈ کی جنوب مغربی سرحد پر لاک ڈاؤن کے خلاف احتجاج کیا مظاہرین کی جانب سے احتجاج اس پل پر کیا گیا جو پولینڈ اور جرمنی کو ملاتا ہے۔
مظاہرین کا کہنا تھا کہ پولینڈ اور جرمنی کے درمیان سرحد بند ہونے اور لاک ڈاؤن کے باعث بیروزگارہوگئے ہیں لہٰذا لاک ڈاؤن کے فوری طور پر خاتمے کے ساتھ ساتھ دونوں ممالک کے درمیان سرحد کو بھی کھولا جائے تاکہ ہم روزگار شروع کرسکیں۔
اس احتجاج کی خاص بات یہ تھی کہ لوگوں کی بڑی تعداد میں شمولیت کے باوجود لوگوں نے احتیاط کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑا اور کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے شرکا ایک دوسرے سے چند فٹ کے فاصلے پر کھڑے نظر آئے۔
پولینڈ یورپی یونین کے ان ممالک میں شامل جنہوں نے وائرس کے پھیلاؤ کے سبب اپنی سرحدیں بند کردی تھیں جبکہ اس نے اپنی سرحدوں میں داخل ہونے والوں کے لیے لازمی قرنطینہ میں رہنے کی شرط بھی عائد کی تھی۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: