اثاثہ جات کیس،خورشید شاہ کا جسمانی ریمانڈ مسترد

سکھر کی احتساب عدالت میں پی پی رہنما خورشید شاہ کے خلاف اثاثہ جات ریفرنس سے متعلق سماعت ہوئی، نیب وکیل نےعدالت سے خورشید شاہ کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی،،، پراسیکیوٹر نے عدالت سے کہا کہ خورشید شاہ نیب سے تعاون نہیں کر رہے ہیں، نیب ان سے مزید تحقیقات کرنا چاہتا ہے،مزید 15 دن کا جسمانی ریمانڈ دیا جائے، جو ریمانڈ اب تک ملا تھا اس میں آدھا وقت تو ہسپتال میں گزر گیا، تاہم عدالت نے نیب پراسیکیوٹر کی استدعا مسترد کر دی۔
احتساب عدالت نے23 نومبر تک جوڈیشل ریمانڈ منظور کرکے پی پی رہنما کو جیل بھیج دیا،،،
خورشید شاہ کو نیب 58 دن تک پہلے ہی ریمانڈ پر رکھ چکی ہے، تاہم نیب خورشید شاہ کے خلاف اب تک کوئی ٹھوس ثبوت عدالت میں پیش نہیں کرسکی، کیس کی سماعت میں نیب نے مزید ریمانڈ کی استدعا کی جس پر خورشید شاہ کے وکیل کا کہنا تھا کہ ان کے مؤکل کی طبیعت خراب ہے، مزید ریمانڈ نہ دیا جائے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.