آپریشن ردالفساد کے3 سال مکمل

آپریشن ردالفساد کے تین سال مکمل ہونے پرآرمی چیف جنر ل قمر جاوید باجوہ نے اپنے پیغام میں کہا کہ آپریشن دہشتگردی کے خلاف بلا تخصیص شروع کیا گیا. افواج پاکستان تمام چیلنجز سے آگاہ ہے.پاک فوج ملکی سلامتی کو در پیش
خطرات سے نمٹنے کی مکمل صلاحیت رکھتی ہے
ڈی جی آئی ایس پی آر نےقوم کو مبارکباد دیتے ہوئے ٹویٹ کیا کہ انتہا پسند نظریے کو شکست دینے پر قوم کو سلام پیش کرتے ہیں،دہشتگردی سے سیاحت تک کے سفر میں بے مثال کامیابیاں حاصل کی ہیں،جان و مال کی قربانیوں کے باعث کامیابیاں حاصل ہوئیں۔ ہمارے شہید ہمارا فخر ہیں ، انہیں سلام پیش کرتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ کے نتائج پاکستان اور خطے میں امن کی صورت میں سامنے آ رہے ہیں۔
سپہ سالار کا قوم سے عہد پورا ہوا ،،آپریشن ردالفساد میں تاریخ ساز کامیابیاں حاصل ہوئیں ،،ملک بھر سے دہشت گردوں کا صفایا ہو نے سے پاکستان کا امن لو ٹ آیا،،آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے تین سال قبل پاک فوج کی کمانڈ سنبھالتے ہی آپریشن ردالفساد کا آغاز کیا
آپریشن ردالفساد کے دوران ملک بھر میں 1 لاکھ 49 ہزار سے زائد انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز ہوئے،،آپریشن کے تحت 22 فروری 2017 سے 22 فروری 2020 تک دہشت گردوں کے 400 منصوبے ناکام بنائے گئے،،جبکہ فوجی عدالتوں نے 344 دہشت گردوں کو سزائے موت کی سزا سنائی اور 301 کو دیگر سزائیں دی گئیں،،اس کے علاوہ دہشت گردوں کی پاک افغان سرحد پر نقل و حمل روکنے کا بھی بڑا منصوبہ کامیاب بنایا گیا۔آرمی چیف کی قیادت میں پاک فوج نے پاکستان کو پر امن ملک بنایا۔جس کا اعتراف عالمی سطح پر بھی کیا گیا ہے۔
آپریشن ردالفساد کے نتیجے میں کراچی میں سے دہشت گردوں کا خاتمہ ہواکراچی خطرناک شہروں کی فہرست میں سے 97 سے 91 نمبر پر آ گیا ،،اسلام آباد دنیا کے پرامن شہروں میں شامل ہوا اور اقوام متحدہکا فیملی سٹیشن بنا،امن بحال ہوتے ہی ملک میں کھیل کے میدان آباد ہونے رونقیں لوٹ آئیں،،امریکہ اور برطانیہ نے بھی پاکستان کو اپنے شہریوں کے لیے محفوظ قرار دیا۔جس پر غیر ملکی شہری اور فوجی بھی پاک فوج کو سراہے بغیر رہ نہ سکے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: