آغاسراج درانی کے جسمانی ریمانڈ میں 11مارچ تک توسیع

آغا سراج درانی کو کراچی کی احتساب عدالت میں پیش کیا گیا، تفتیشی افسر نے عدالت سے اسپیکر سندھ اسمبلی کے مزید ریمانڈ کی درخواست کرتے ہوئے عدالت کو بتایا کہ آغا سراج درانی روزانہ کی بنیاد پر اسمبلی چلے جاتے ہیں جس کی وجہ سے تفتیش میں مشکلات کا سامنا ہے،تفتیشی افسر نے کہا کہ آغا سراج درانی کی کروڑوں روپے مالیت کی جائیداد کا سراغ ملا ہے ،اس کے علاوہ متعدد بنگلے سراج درانی کی ملکیت ثابت ہو رہے ہیں جبکہ ان کی صاحبزادیوں نے بھی تین فلیٹس بک کرا رکھے ہیں۔آغا سراج درانی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ نیب نے اثاثوں کا کیس بنایا ہے،مطلوبہ دستاویزات نیب کو دے چکے ہیں اس کے علاوہ تمام منی ٹریل سمیت دیگر دستاویزات بھی نیب کوفراہم کردی گئی ہیں۔ عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد آغا سراج درانی کے جسمانی ریمانڈ میں 11 مارچ تک کی توسیع کردی۔اس سے قبل عدالت پہنچنے پر میڈیا سے گفتگو میں آغا سراج درانی کا کہنا تھا کہ میری پوری فیملی کو نیب نے پریشان کیا جارہا ہے، میرے بھائی کو بھی نیب نے نوٹس بھیجے ہیں، نِیب سے مکمل تعاون کر رہا ہوں جبکہ ہمیں عدلیہ پر یقین ہے،عدالت سے انصاف ملےگا۔ سپیکر سندھ اسمبلی کے بھائی آغا مسیح الدین نے حفاظتی ضمانت کیلئے سندھ ہائی کورٹ میں درخواست دائر کر دی

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.